غربا ٕ کے لیےقاٸم سستا بازار بیوروکریسی کی بد انتظامی کی نذر ہوتی جا رہی ہے ۔ عوام پریشان, سستے بازار رلیف اور امداد کے نام پر عوام کی تذلیل بند کی جاٸے ان خیالات کا اظہار سماجی رہنماء عثمان شیرازی آف اغز بانڈہ نے ایک بیان میں کہا کہ اگر بجلی کے بل گھر گھر جا کر تقسیم ہو سکتے ہیں تو غریبوں کو ریلیف کیوں نہیں ؟ ایک طریقہ یہ بھی ہو سکتا ہے کہ ہر محلہ کی مساجد کمیٹیوں کے ذریعہ حقداران تک پہنچایا جاٸے امام صاحبان نمازیوں کے توسط سے فہرست مرتب کراٸیں اور ہر گھر کو باعزت طریقہ سے گھر پر سستا ریلیف فراہم کیا جاۓ تاکہ حق دار تک حق پہنچے اور ان کی عزت نفس بھی مجروح نہ ہو یوں عوام لاٹھی چارج سے بھی بچ جاٸے ۔ مرتب شدہ لسٹیں آٸندہ بھی کام آٸیں گی ۔ امید ہے آٸمہ کرام اور درد مند شہری تھوڑا سا وقت دے کر اس کارِخیر کی انجام دہی میں ضرور اپنا حصہ ڈالیں گے ۔مگر بیوروکریسی کو ایسی کوٸی تجویز پسند نہیں آٸے گی جس میں ان کا حصہ محدود کر دیا جاٸے ۔

By Admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *