ایران سے متصل پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع کیچ کے ہیڈکوارٹر تربت میں سکیورٹی فورسز نے دہشتگردوں کی تربت میں بحریہ کے ائیر بیس پی این ایس صدیق پر حملے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے چار حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا ہے۔ جبکہ اس کارروائی میں ایک سیکورٹی اہکار بھی مارا گیا ہے۔

پاکستان کی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے جاری کردہ بیان کے مطابق سکیورٹی فورسز نے دہشتگردوں کی تربت میں پاکستان بحریہ کے ائیر بیس پی این ایس صدیق پر حملے کی کوشش ناکام بنا دی ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس حملے میں فورسز نے اثاثوں کی حفاظت یقینی بناتے ہوئے بروقت اور مؤثر جواب سے حملہ ناکام بنایا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ ائیربیس پی این ایس صدیق تربت پر حملہ 25 اور 26 مارچ کی درمیانی شب کیا گیا، جس کے بعد بحری دستوں کی مدد کے لیے ارد گرد موجود سکیورٹی فورسز کو فوری متحرک کیا گیا، مسلح افواج کے مؤثر جواب نے مشترکہ کلیئرنس آپریشن کیا، مشترکہ کلیئرنس آپریشن میں چاروں دہشتگردوں کو ہلاک کر دیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق اس دوران شدید فائرنگ کے تبادلے میں ایف سی بلوچستان کے نعمان فرید نامی سپاہی بھی مارے گئے ۔ 24 سالہ سپاہی نعمان فرید شہید کا تعلق مظفرگڑھ سے ہے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق علاقے میں مزید کسی دہشتگرد کے خاتمے کے لیے کلیئرنس آپریشن جاری ہے۔ آئی ایس پی آر کا کہنا ہےکہ مسلح افواج ملک سے دہشتگردی کی لعنت ہرقیمت پرختم کرنے کیلئے پرعزم ہیں۔

اس حملے کی ذمہ داری کالعدم شدت پسند تنظیم بی ایل اے کے مجید بریگیڈ کی جانب سے قبول کی گئی ہے۔ تنظیم نے ترجمان نے ایک بیان میں دعویٰ کیا کہ اس کے کارکن پیر کی شب دس بجے تربت میں نیول ائیربیس پر حملہ کر کے حفاظتی حصار توڑ کر اندر داخل ہونے میں کامیاب ہوئے۔

یہ ایک ہفتے کے دوران اس شدت پسند تنظیم کی جانب سے بلوچستان میں کیا جانے والا دوسرا بڑا حملہ ہے۔ اس سے قبل کیچ سے متصل ضلع گوادر میں پورٹ اتھارٹی کمپلیکس پر بھی متعدد شدت پسندوں نے حملہ کیا تھا جسے پاکستانی حکام کے مطابق ناکام بنا دیا گیا تھا۔

اس حملے میں سرکاری حکام نے دو اہلکاروں کے مارے جانے کی تصدیق کی تھی جبکہ آٹھ حملہ آور بھی ہلاک کر دیے گئے تھے۔

کیچ اور گوادر انتظامی لحاظ سے مکران ڈویژن کا حصہ ہیں۔ بلوچستان میں حالات کی خرابی کے بعد ان اضلاع میں بھی اس نوعیت کے واقعات کمی و بیشی کے ساتھ پیش آرہے ہیں۔

By Admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *