سعودی عرب کا غیر ملکیوں کے لیے نئے رہائشی اجازت نامے متعارف کرنے کا فیصلہ

اجازت نامے حاصل کرنے والے اپنے اہل خانہ کے ارکان کے لیے ’پریمیم ریذیڈنسی سٹیٹس‘ حاصل کرنے، کاروبار چلانے، فیس کے بغیر رقم کی منتقلی اور رشتہ داروں کو مملکت مدعو کرنے کے قابل بھی ہوں گے۔

sharethis sharing button

‌سعودی عرب غیر ملکیوں کے لیے پانچ نئے رہائشی اجازت نامے متعارف کروانے جا رہا ہے جس سے اہل درخواست دہندگان مملکت میں رہتے ہوئے غیر ملکیوں کے لیے مختص فیس کی ادائیگی سے استثنیٰ، ویزا فری بین الاقوامی سفر اور جائیداد کی ملکیت کے حق جیسے فوائد حاصل کر سکیں گے۔

یہ اجازت نامے حاصل کرنے والے اپنے اہل خانہ کے ارکان کے لیے ’پریمیم ریذیڈنسی سٹیٹس‘ حاصل کرنے، کاروبار چلانے، فیس کے بغیر رقم کی منتقلی اور رشتہ داروں کو مملکت مدعو کرنے کے قابل بھی ہوں گے۔

ریزیڈنسی پیکجز کے لیے مخصوص اہلیت درکار ہو گی جس میں خصوصی ہنر مند، ہنر مند، سرمایہ کار، کاروباری اور رئیل اسٹیٹ کی کیٹیگریز شامل ہوں گی۔

ہر پروڈکٹ کے لیے ایک بار چار ہزار ریال فیس ادا کرنا ہو گی۔

saudi_arabia_new_residence_policy-01.jpg

زیادہ تر معاملات میں درخواست کے لیے عمومی تقاضے لاگو ہوں گے جن میں درست پاسپورٹ، تازہ ترین میڈیکل سرٹیفکیٹ، اور سعودی عرب میں (ملک کے اندر درخواست دینے والوں کے لیے) قانونی رہائشی دستاویز شامل ہیں۔

پانچ سالہ سپیشل ٹیلنٹ ریذیڈنسی آپشن حاصل کرنے کے لیے درخواست دہندگان کو طب اور سائنس میں مہارت رکھنے اور کم از کم ماہانہ 35 ہزار ریال کمانے والے پیشہ ور افراد یا 14 ہزار کی کم از کم ماہانہ تنخواہ لینے والے ریسرچر ہونا ضروری ہے۔

سپیشل ٹیلنٹ سٹیٹس حاصل کرنے والے ایگزیکٹوز کو 80 ہزار ریال سے زیادہ کی ماہانہ تنخواہ کے ساتھ ایگزیکٹو لیول کی ملازمت کے معاہدے کی ضرورت ہو گی۔

By Admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *