چین نے پاکستان پر واضح کیا ہے کہ سرمایہ کاری کے لیے ملک کی داخلی صورتحال کو بہتر بنانا ہو گا۔

جمعے کو چینی وزیر لیوجیان چاؤ نے اسلام آباد میں پاک چین مشاورتی میکانزم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان معاہدوں سے ترقی کے نئے مواقع پیدا ہوں گے لیکن ترقی کے لیے اندرونی استحکام ضروری ہے۔

چینی وزیر نے پاکستان کی تمام سیاسی قیادت کے سامنے یہ واضح کیا کہ ’سرمایہ کاری کے لیے سکیورٹی صورتحال کو بہتر بنانا ہو گا۔ انھوں نے کہا کہ ’بہتر سکیورٹی سے تاجر پاکستان میں سرمایہ کاری کریں گے۔‘ پاکستان کے سیاسی حالات پر تبصرہ کیے بغیر چینی وزیر نے کہا کہ اداروں اور سیاسی جماعتوں کو مل کر چلنا ہوگا۔

پاکستان کے نائب وزیر اعظم اور وزیر خارجہ اسحٰق ڈار نے کہا ہے کہ سی پیک دو طرفہ تعلقات کا اہم ستون ہے، سی پیک کے دوسرے مرحلے میں پاک چین دوستی مزید مضبوط ہوگی، جبکہ سی پیک پر تمام ملکی جماعتیں ایک پیج پر ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم شہباز شریف کے دورہ چین میں منصوبوں کو اپ گریڈ کرنے پر اتفاق کیا گیا، سی پیک کے اگلے مرحلے میں صنعتی پارکس قائم کیے جائیں گے، سی پیک کے اگلے مرحلے میں خصوصی اقتصادی زونز بھی قائم کیے جائیں گے، جبکہ تجارت اور پائیدار ترقی کو آگے بڑھانے کے کئی مواقع کی نشاندہی کی گئی ہے۔

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی جماعتوں کا ایک میز پر بیٹھنا دوطرفہ سیاسی قیادت کے ایک پیج پر ہونے کی دلیل ہے۔ انھوں نے کہا کہ ’پاکستان کے مشکل حالات میں تعاون پر چینی قیادت کے شکرگزار ہیں۔‘

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ محفوظ مستقبل کے لیے سی پیک منصوبے پر مل کر کام کرنا ہوگا۔

By Admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *